آذربائیجان کی فتوحات کے بعد روس اور ترکی میں بڑے جنگی تنازعہ کے خطرات

ترکی کا آذربائیجان کے ساتھ کھلا اظہار یکجہتی اور آرمینیا کا روس کے ساتھ دفاعی معاہدہ ہے۔ اور ان ممالک کے مابین یہ اتحادی تعلقات دنیا کو کسی بڑے تنازعہ کی طرف لے جا سکتے ہیں

ناگورنو کاراباخ میں آذربائیجان کی فتوحات کا سلسلہ جاری ہے ۔ جبکہ دوسری طرف شکست خوردہ آرمینیا اب آذربائیجان کی شہری آبادیوں پر میزائیل حملے کر رہا ہے۔ دوسرے بڑے آذری شہر گنجہ کی شہری آبادی آرمینیائی حملوں کی شدید زد میں ہے۔ جبکہ ترکی نے آذری شہری علاقوں پر حملوں کی مذمت کی ہے۔
 
 آذربائیجان نے آرمینیا سے پچاس سے زائد قصبے اور دیہات آزاد کرا لئے ہیں ۔ عالمی خبر رساں ایجنسیوں کے مطابق جبرائیل سمیت سید احمدلی ، مارالیان ، مہدی لی، کوئیجاق ، قند ہورادز، چاکر لی، بویوک مرجانلی ، شے بے، تالش، کارکولو ، شکروبیلی ، بالائی مارالیان ، جرکان ، دشکسان ، دیجان ، محمودلو ، جعفرآباد ، سوگاووشان اور پاپی نامی دیہاتوں سمیت کئی علاقوں کو آزاد کرا لیا گیا ہے ۔ آذری فوج نے کاراباخ کے اہم مرکزی گاؤں تالش پر قومی پرچم لہرا دیا ہے۔
۔
آذربائیجان کی وزارت دفاع نے کہا کہ ارمینی فوج نے آذربائیجان کے بڑے شہروں گنجا اور منگیسیویر کی شہری آبادیوں پر میزائیل حملے کیے ہیں۔ جبکہ تین دیگر شہروں بیلاگن ، بردہ اور ٹیرٹر پر گولہ باری جاری ہے ۔ آذربائیجان کے محکمہ خارجہ پالیسی امور کے سربراہ حکمت حاجیئف نے ٹویٹ کیا کہ چار توچکا بیلسٹک میزائل ایک لاکھ کی آبادی والے شہر منگی سیویر پر پھینکے گئے ہیں ۔ یہ شہر آرمینیا کی سرحد سے 100 کلومیٹر دور واقع ہے۔
۔
۔ 
آذربائیجان کے صدر الہام علیوف نے اعتراف کیا ہے کہ ترکی کے ڈرونز کی وجہ سے آرمینیا کے خلاف لڑائی میں فتح حاصل کرنے میں مدد ملی ہے۔ ترکی کے نیوز چینل ٹی آر ٹی ہیبر کو انٹرویو دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ ڈرونز نہ صرف ترکی کی طاقت کا مظہر ہیں بلکہ ان کی وجہ سے ہمیں بھی جنگ کے دوران بہت طاقت ملی ہے۔
 
ایران کے اتحادی ملک شام کے ڈکٹیٹر صدر بشار الاسد نے ایک بیان میں کہا ہے کہ وہ تصدیق کرتے ہیں کہ شام سے مسلح گروہ ناگورنوکاراباخ میں تعینات تھے ۔ ترکی اور آذربائیجان نے شام ، فرانس ، روس اور ایران کی طرف سے ان الزامات کی تردید کی ہے کہ ترکی اس لڑائی میں حصہ لینے کیلئے جنگجو بھیج رہا ہے۔ شام کے صدر بشار الاسد نے ترکی کے صدر طیب اردگان پر ناگورنوکاراباخ کے تنازعہ کا اصل اشتعال انگیز ہونے کا الزام عائد کیا ہے۔
۔ 
روس کی آر آئی اے نیوز ایجنسی کو انٹرویو دیتے ہوئے ایران کے اتحادی اور شامی مسلمانوں کا وحشیانہ قتل عام کرنے والے  ڈکٹیٹر صدر بشار الاسد نے ترکی کے صدر طیب اردگان پر ناگورنوکاراباخ کے تنازعہ  میں اصل اشتعال انگیز کردار ہونے کا الزام عائد کیا ہے۔
 
۔
عالمی مبصرین کے مطابق اس لڑائی سے بین الاقوامی تشویش میں اضافہ ہوا ہے کہ دیگر علاقائی طاقتوں کو بھی تنازعہ میں گھسیٹا جاسکتا ہے – ترکی کا آذربائیجان کے ساتھ کھلا اظہار یکجہتی اور آرمینیا کا روس کے ساتھ دفاعی معاہدہ ہے۔ اور ان ممالک کے مابین یہ دفاعی اتحادی تعلقات مستقبل میں دنیا کو کسی بڑے تنازعہ کی طرف لے جا سکتے ہیں
۔
خطے کی صورت حال کے بارے میرا یہ کالم بھی پڑھیے
FAROOQ RASHID BUTThttp://thefoji.com
Chief Editor of Defence Times and Gulf Asia News, a defence analyst, journalist, patriotic blogger, poet and freelancer WordPress web designer. A passionate flag holder of world peace

DEFENCE ARTICLES

پاکستان ائر فورس میں بہت جلد شامل ہونے والا اگلا ملٹی رول فائٹر جیٹ ، پاکستان کے...
عالمی پریس اور پاک فضائیہ نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ پاکستان خطے میں فوجی...
جے ایف - 17 کے جدید ورژن بلاک 3  میں فضا سے فضا میں مار کرنے والے...
According to Pakistan armed forces media wing, Pakistan conducted a successful flight test of the Shaheen 1-A,...
مصدقہ دفاعی ذرائع کے مطابق پاکستان نے اپنے فضائی حدود اور بحیرہ عرب کے سمندری فضائی حدود...
بی جے پی راہنما راجیشور سنگھ کا کہنا ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے مطابق 2021 تک...

Comments

Leave a Reply

DEFENCE NEWS

MY INSTAGRAM

spot_img

DEFENCE BLOG

23 Indian soldiers killed, 31 wounded in Maoist militant attack

At least 23 Indian soldiers have been killed and...

Pakistan test-fires the nuclear capable Shaheen 1-A ballistic missile

According to Pakistan armed forces media wing, Pakistan conducted...

Ten Reasons Why Pakistani JF-17 Thunder defeated Indian Tejas in Global Market

According to world-renowned air defense experts, the Pakistani JF-17...

Females can Join Pak Army as Captain through Lady Cadet Course (LLC)

Pakistan's young generation have a passion and dreams for...