چین نے بھارت کی سیاچن کی سپلائی لائن کاٹ کر سرحدوں پر میزائل نصب کر دیے

چین نے سیاچن کیلئے بھارتی سپلائی لائن کاٹ کر مشرقی لداخ میں بھاری تعداد میں فوجی دستے اور جنگی ساز و سامان جمع کر لیا ۔ سرحد پر انٹی ایئر کرافٹ میزائیل لانچرز نصب کر دیے گیے

0
986
China India tensions in ladakh
مشرقی لداخ میں دیپسانگ کا علاقہ سرحد پر چین کی فوجی سرگرمیوں کا تازہ ترین مرکز بن رہا ہے۔ مصنوعی سیارہ کی تصاویر سے پتہ چلتا ہے کہ چین سیاچن کیلئے بھارتی سپلائی کے ممکنہ راستے کاٹ کر مشرقی لداخ میں لائن آف ایکچول کنٹرول کے بالکل پیچھے بھاری تعداد میں فوجی دستے اور جنگی ساز و سامان جمع  کر رہا ہے۔
 

گذشتہ دنوں کی خونریز جھڑپ کے بعد چین کی تازہ ترین فوجی سرگرمیوں سے پتہ چلتا ہے کہ چین تمام بھارتی دعوے مسترد کر کے کسی صورت پیچھے ہٹنے کیلئے تیار نہیں ہے۔

 
میکسر ٹیکنالوجی کی 22 جون کی سیٹلائٹ تصاویر سے واضح اشارے ملتے ہیں کہ چین گیلوان وادی میں بھارتی قبضہ والےعلاقوں میں مذید اندر داخل ہو رہا ہے۔ گذشتہ روز بھارت کے دولت بیگ سیکٹر کے مخالف سمت میں ڈیپسانگ کے میدانی علاقے میں بھی چینی فوجیں اپنی چوکیوں سے کئی کلومیٹرز آگے بڑھ کر نئی چوکیاں بنا رہی ہے۔ یہاں سیٹیلائٹ پر چین کی طرف سے نئی جنگی تعمیرات بھی دیکھی جا رہی ہیں
 
جنگی نقطہ نظر سے یہ انتہائی اہم ڈیویلپمنٹ چین کی اہم کامیابی ہے کہ چین اب لداخ سیکٹر میں اس مقام تک پہنچ گیا ہے جہاں سے وہ نہ صرف دولت بیگ سیکٹر کے اوپر ہوائی نقل و حرکت کا مشاہدہ کرسکتا ہے۔ بلکہ یہاں سے وہ سیاچن گلیشیر تک بھارت کی ہر بری اور فضائی نقل و حرکت پر مسلسل نظر رکھ سکتا ہے۔
 
تازہ ترین اطلاعات کے مطابق بھارت کی طرف سے اپنے جنگی طیاروں کو چینی سرحد کے نزدیک ایئر بیس پر پہنچانے کے بعد چین نے فوری طور پر لداخ سرحد پر اپنا ایئر ڈیفنس سسٹم اور جدید ترین انٹی ایئر کرافٹ میزائیل نصب کر دئے ہیں۔ چین واضع اشارات دے رہا ہے کہ وہ بھارت کی جارحیت کو کسی خاطر میں نہیں لائے گا اور جنگ کیلے پوری طرح تیار ہے۔ ۔
 
ذرائع کے مطابق نریندر مودی کا پارلیمنٹ میں بیان بازی اور حقائق پر پردہ ڈالنے کی تمام کوششیں ناکام ہو رہی ہیں ۔ ہندوستانی حکومت سمارٹ بننے کی کوشش کر رہی ہے۔ جبکہ چین نے ویڈیوز اور تصاویر کی مدد سے ثابت کر دیا ہے کہ بھارت نے چین کیخلاف جارحیت اور جنگی مہم جوئی کی کوشش کی جس کے جواب میں 20 سے زیادہ بھارتی فوجی ہلاک اور ساٹھ کے قریب شدید زخمی ہوئے۔
 
نریندر مودی یا بھارتی میڈیا کی طرف سے یہ کذب بیانی کہ صورت حال بھارت کے کنٹرول میں ہے، صرف اپنےعوام کو فریب دینے والی بات ہے۔ جبکہ سیٹلائٹ تصاویر تک رسائی رکھنے والےعالمی دفاعی مبصرین ہی نہیں پوری دنیا بھارتی شکست کے تمام حقائق سے پوری طرح واقف ہے۔
 

Leave a Reply